بورڈ آف ڈائریکٹرز

                                                                                                       (جناب عثمان سیف اللہ خان (چیئرمین / ڈائریکٹر

جناب عثمان سیف اللہ خان مارچ 2012 میں سینیٹ آف پاکستان میں بلا مقابلہ منتخب ہوئے تھے۔ وہ پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رکن ہیں اور ایک جنرل نشست پر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی نمائندگی کرتے ہیں۔ سینیٹر عثمان خان سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے سائنس اینڈ ٹکنالوجی کے چیئرمین اور چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پی ای سی) سے متعلق سینیٹ کمیٹی کے ممبر ہیں۔
وہ سینیٹ کی تین دیگر کمیٹیوں میں بھی کام کرتے ہیں۔
(i) مالیات
(ii) انفارمیشن ٹکنالوجی اور ٹیلی مواصلات اور
(iii) قواعد و استحقاق – وہ کابینہ سیکرٹریٹ سے متعلق سینیٹ کمیٹی کے ممبر بھی تھے۔
جناب عثمان خان نجی ممبر کے بل، ڈومیسٹک ورکرز (ایمپلائمنٹ رائٹس) بل 2015 کے منتقدہ تھے، جسے سینیٹ نے 7 مارچ 2016 کو منظور کیا تھا۔
انہوں نے سیف گروپ، جواسلام آباد میں صدر دفتر رکھنیوالا متنوع صنعتی اور خدمات کا گروپ ہے، کے ساتھ متعدد اسٹریٹجک اور آپریٹنگ کردار ادا کیا ہے۔ جناب عثمان خان نے 1995 میں سیف گروپ میں شمولیت اختیار کی تھی، اور اس وقت انہوں نے ٹیکسٹائل کے کاروبار میں رہنمائی کرنے کے علاوہ گروپ کے وائس چیئرمین کی حیثیت سے بھی خدمات انجام دی ہیں۔ وہ گروپ کی متعدد کمپنیوں میں بورڈ کے ممبر بھی ہیں اور وہ پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او) کے بورڈ پر بھی رہے ہیں۔ عثمان خان گروپ کی پرنسپل انویسٹمنٹ اور اس کی بزنس ڈویلپمنٹ ٹیموں کی بھی قیادت کر چکے ہیں۔
وہ مختلف صنعت وکالت پلیٹ فارم سے وابستہ ہیں، پاکستان بزنس کونسل (پی بی سی) کے ممبر ہیں۔ وہ منصوبہ بندی کمیشن آف پاکستان کی مشاورتی کمیٹی میں خدمات انجام دے رہے ہیں، پاکستان سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کے پالیسی بورڈ کے رکن ہیں اور صدر غلام اسحاق خان انسٹی ٹیوٹ آف انجینئرنگ سائنسز (جی آئی کے آئی) کے مشیر بھی ہیں۔.جناب عثمان خان صوبہ خیبر پختون خواہ کے جنوبی اضلاع میں پانی، صحت اور تعلیم کے امور پر توجہ دینے والی ایک غیر منفعتی تنظیم، وڈان فاؤنڈیشن کے بانی ہیں۔
سینیٹر خان نے کرسچن چرچ، یونیورسٹی آف آکسفورڈ (1995) سے انجینئرنگ، اکنامکس اینڈ مینجمنٹ میں ماسٹر ڈگری حاصل کی، جہاں وہ برٹانیا سکالر تھے اور اسٹینفورڈ یونیورسٹی (2009) کے گریجویٹ اسکول آف بزنس سے بزنس ایڈمنسٹریشن (ایم بی اے) میں ماسٹر ڈگری رکھتے ہیں۔
                      (محترمہ حور یوسف زئی۔(ڈائریکٹر
محترمہ حور یوسف زئی سیف ہیلتھ کیئر کی چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) ہیں۔ وہ جنوری 2007 میں سیف ہولڈنگز کی ڈائریکٹر کی حیثیت سے سیف گروپ میں شامل ہوئیں۔
چارٹرڈ اکاؤنٹنٹ کی حیثیت سے، محترمہ حور یوسف زئی گروپ کے کارپوریٹ ٹیکس اور ریگولیٹری تعمیل کی بہتری اور اس پر عمل درآمد کرنے کی بھی ذمہ دار ہیں،جبکہ اسٹریٹجک پلاننگ اور پروجیکٹ کی جانچ پڑتال میں چیئرمین اور شریک چیئرمین کی مدد بھی کرتی ہیں۔
سیف گروپ میں شامل ہونے سے پہلے، انہوں نے کے پی ایم جی میں کام کیا جہاں اپنے آرٹیکلز کو مکمل کرتے ہوئے انہیں کافی تجربہ ملا۔
محترمہ حور یوسف زئی 2008 میں انسٹی ٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاؤنٹنٹس آف پاکستان کی ایسوسی ایٹ ممبربنیں۔ انہوں نے اکنامکس اور کمپیوٹر سائنسز میں ماسٹر ڈگریاں بھی حاصل کی ہوئی ہیں۔ 
          ( جناب اسد سیف اللہ خان۔ (چیف ایگزیکٹو
جناب اسد سیف اللہ خان سیف ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹو ہیں۔ وہ کوہاٹ ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ کے سی ای او اور سیف گروپ کے قانونی امور کے ڈائریکٹر بھی ہیں۔ قانونی محکمہ کے سربراہ کی حیثیت سے، وہ گروپ کے ماتحت اداروں اور اس سے وابستہ کمپنیوں کے لئے تمام قانونی اور معاہدہ کے معاملات کی نگرانی کرنے کے لئے ذمہ دار ہے۔

جناب اسد سیف اللہ خان برطانیہ اور پاکستان میں کام کرنے کے وسیع تجربہ کو اپنے ساتھ لائے ہیں۔اپنی قانونی تعلیم کے دوران،جناب اسد سیف اللہ خان نے اور ڈگنم اینڈ کو (اسلام آباد) کے ساتھ اور لیبر پارٹی کے موجودہ نائب لیڈر یعنی ہریئت حرمین کے ساتھ کام کیاہے۔
بار پیشہ ورانہ کورس مکمل کرنے کے بعد، جناب اسد خان نے 2007 کے موسم گرما کے دوران پاکستان واپس جانے سے پہلے، لندن میں جے ڈی اسپائسر اینڈ کمپنی،جوکہ ایک معروف لاء فرم ہے، کے ساتھ کام کیا۔اس کے بعد حسن و حسن (لاہور) میں ایسوسی ایٹ کی حیثیت سے ایک سال کی مدّت مکمل کی۔ ڈاکٹر پرویز حسن کی نگرانی میں، جناب اسد خان نے کمپنی کے معاملات اور کئی بڑے ملٹی نیشنلز کے کارپوریٹ کاموں کو سنبھالا۔
جناب اسد سیف اللہ خان نے 2004 میں یونیورسٹی آف پنسلوانیا سے گریجویشن کی، جس میں میجر ہسٹری اینڈ کلچر اورمائینر فرانسیسی زبان تھا۔ اس کے بعد وہ قانونی تعلیم کے حصول کے لئے لندن چلے گئے۔انھوں نے 2005 میں کالج آف لاء سے کامن پروفیشنل اگزیم / گریجویٹ ڈپلومہ حاصل کیا جبکہ 2007 میں اننس آف کورٹ اسکول آف لاء (آئی سی ایس ایل) سے بار ووکیشنل کورس میں سند حاصل کی-

                   (جناب عبدالرحمان قریشی۔ (ڈائریکٹر
جناب عبدالرحمان قریشی پاکستان کے سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن میں بطور کمشنر کام کر چکے ہیں۔ انہیں کمپنیوں کے کارپوریٹ امور کا وسیع تجربہ ہے۔ انہوں نے نیشنل اینٹی کرپشن اسٹریٹیجی (این اے سی ایس) اسٹیئرنگ کمیٹی، نیب، اسلام آباد، ممبر بورڈ آف گورنرز (گورنر، صوبہ سرحد کی سربراہی میں)، انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ سائنسز، پشاور وغیرہ سمیت مختلف کمیٹیوں کے ممبر کی حیثیت سے کام کیا۔ انہوں نے 7 سال کمیشن اور سیکیورٹیز اینڈ ایکسچینج پالیسی بورڈ کے سیکرٹری کی حیثیت سیبھی کام کیا۔
جناب عبدالرحمان قریشی نے 17.02.2003 سے 19.08.2003 تک کمیشن کے قائم مقام چیئرمین کے طور پر بھی کام کیا ہے۔
                   (جناب رانا محمد شفیع۔ (ڈائریکٹر
جناب رانا محمد شفیع اس وقت سیف گروپ آف کمپنیز کے بورڈ آف ڈائریکٹر کے مشیر ہیں۔ وہ بورڈ آف ڈائریکٹرز کو سرمایہ کاری، انضمام، اور نئے منصوبوں کے حصول اور سیف گروپ کمپنیز کے مالی معاملات پر مشاورت فراہم کرتے ہیں۔ وہ اثاثوں کو محفوظ بنانے، نئے منصوبوں کے لئے فنڈز کے حصول اور سرمایہ مارکیٹوں میں کاروبار سے متعلّق مشورہ بھی دیتے ہیں۔
ان کے پاس کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاؤنٹنگ، کارپوریٹ اکاؤنٹنگ، انتظامیہ، انتظام، نظم و نسق، خزانے اور مالیاتی انتظام کے شعبے میں 46 سال سے زیادہ کا متنوع تجربہ ہے۔ وہ جنوری 1981 سے سیف گروپ سے وابستہ ہیں اور انہوں نے کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاؤنٹنٹ، چیف اکاؤنٹنٹ، کمرشل منیجر، جنرل منیجر فنانس، ایگزیکٹو ڈائریکٹر فنانس اور چیف فنانشل آفیسر کی حیثیت سے کام کیا ہے۔
انھوں نے کارپوریٹ اکاؤنٹنگ، لیڈر شپ مینجمنٹ، اور ٹریژری فنانسنگ سے متعلق متعدد ورکشاپس کا انعقاد کیا۔ سیف گروپ میں شمولیت سے قبل، وہ علی ٹیکسٹائل مل لمیٹڈ، جھنگ (3 سال)، منصور ٹیکسٹائل ملز لمیٹڈ، لاہور (3 سال) اور نشاط ملز لمیٹڈ فیصل آباد (5 سال) سے وابستہ رہے ہیں۔
انھوں نے جامعہ پنجاب سے کامرس میں ماسٹر کی ڈگری حاصل کی ہے جبکہ وہ انسٹی ٹیوٹ آف کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاؤنٹنٹس آف پاکستان سے کاسٹ اینڈ مینجمنٹ اکاؤنٹنٹ کے فائنلسٹ بھی ہیں۔
                  ( جناب سردار امین اللہ خان (ڈائریکٹر
جناب سردار امین اللہ خان 1977 میں بی ایس 17 میں سی ایس ایس امتحان کے ذریعے ان لینڈ ریونیو سروس آف پاکستان میں شامل ہوئے اور فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے محکمہ انکم ٹیکس میں ممبر، چیف کمشنر، ایڈیشنل کمشنر، ڈپٹی کمشنر اور اسسٹنٹ کمشنر کی حیثیت سے خدمات انجام دینے کے بعد ریٹائر ہوگئے۔ انہوں نے 35 سال تک پاکستان کے اندر اور باہر متعدد سرکاری محکموں میں مختلف صلاحیتوں میں خدمات انجام دیں۔ وہ ٹیکس مینجمنٹ، پروجیکٹ مینجمنٹ، کوآپریٹو ہاؤسنگ مینجمنٹ، سوشل کلب مینجمنٹ، انویسٹمنٹ کو فروغ دینے، سرمایہ کاری اور ٹیکس لگانے، تجارت اور معیشت، ٹیکس اصلاحات وغیرہ سے متعلق قوانین کی تشکیل اور تشریح میں مصروف رہے۔ ان کا آخری منصب2014 میں ڈائریکٹر جنرل، کے پی ریونیواتھارٹی تھا۔
                     (جناب سہیل ایچ حیدری۔ (ڈائریکٹر
 جناب سہیل ایچ حیدری سیف پاور لمیٹڈ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ہیں۔ انھوں نے جنوری 2006 میں سیف گروپ میں شمولیت اختیار کی۔ اس سے قبل، پانچ سال سے زیادہ عرصہ تک، جناب حیدری نے کراچی الیکٹرک سپلائی کارپوریشن کو بجلی فروخت کرنے والے آزاد بجلی پروڈیوسر گل احمد انرجی کے چیف آپریٹنگ آفسر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دیں۔ ان کے دور میں، کمپنی کو درپیش بہت سارے مشکل مسائل حل ہوگئے۔
جناب سہیل ایچ حیدری نے انسٹی ٹیوٹ آف بزنس ایڈمنسٹریشن – کراچی سے ایم بی اے (فنانس) کیا ہے۔ وہ پاکستان سے بینکنگ میں بھی پیشہ ورانہ قابلیت رکھتے ہیں اور یوکے سے انشورنس میں قابلیت رکھتے ہیں۔جناب سہیل ایچ حیدری کے کارپوریٹ کیریئر نے انہیں ایڈورٹائزنگ، بینکاری، ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل اور بجلی کی پیداوار سمیت مختلف صنعتوں میں متنوع تجربہ فراہم کیا ہے۔
گل احمد ٹیکسٹائل میں جناب سہیل ایچ حیدری نے جنرل منیجر – ایکسپورٹس کے طور پر خدمات انجام دیں، جہاں ان کی ذمہ داریوں میں سیلز اینڈ مارکیٹنگ، ایکسپورٹ ری فائنانس، بینکنگ، ٹیکسٹائل کوٹہ ایڈمنسٹریشن، پروڈکشن لائزننگ اور ایچ آر سے متعلق امور شامل تھے۔اس سے قبل وہ پاکستان، لکسمبرگ، جرمنی اور ترکی میں بینک آف کریڈٹ اینڈ کامرس انٹرنیشنل کے ساتھ خدمات انجام دے چکے ہیں۔ بینک کے ساتھ ان کی آخری پوزیشن ترکی میں بطور کنٹری ہیڈ – ٹریژری اور انویسٹمنٹ بینکنگ تھی۔